قادیانیوں کو متفقہ طور پر غیر مسلم قرار دینے کے حوالے 7 ستمبر 1947 تاریخ ساز دن ہے’ پیر سید علی رضا بخاری

اسلام آباد(ورلڈ ویوز اردو) ممبر آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی و سجادہ نشیں درگاہ بساہاں شریف پیر سید علی رضا بخاری نے کہا ہے کہ 7 ستمبر1974 ء وہ تاریخ ساز دن ہے جب پاکستان کی آئین ساز اسمبلی نے بحث و مباحثہ، سوال و جواب اور ہر پہلو پر مکمل غور و خوض کے بعد قادیانیوں کی حیثیت کا تعین کیا اور متفقہ طور پر انہیں غیر مسلم اقلیت قرار دیا۔ بلاشبہ رحمت للعالمین ، خاتم النبیین سیدنا محمد صلی اللہ علیہ وسلم کو آخری نبی تسلیم کرنا اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر نبوت کے باب کو بند سمجھنااسلام کی اساس اور بنیاد ہے جس پر دین اسلام کی پوری عمارت کھڑی ہے۔قرآن مجید کی ایک سو سے زائد آیات مبارکہ اوررحمت للعالمین محمد صلی اللہ علیہ و سلم کی تقریبا ً دو سو دس احادیث مبارکہ اس بات پر دلالت کرتی ہیں کہ تاجدار ختم نبوت حضرت محمدصلی اللہ علیہ و سلم اللہ تعالیٰ کے آخری نبی اور رسول ہیں۔ بیان میں پیر علی رضا بخاری نے کہا کہ سات ستمبر1974ء کے ہی مبارک دن پاکستان کی قانون ساز اسمبلی نے مشترکہ طورپر تاریخ ساز فیصلہ دیتے ہوئے اس فتنے کی جڑوں پر کاری ضرب لگائی اور متفقہ طور پرقادیانیوں ،احمدیوں اورمرزائیوں کوغیرمسلم اقلیت قراردیا جس پر پاکستان کے تمام اکابر مشائخ و علما اور قائدین مبارک باد کے مستحق ہیں۔ انہوں نے آزاد کشمیر میں 1973 میں سب سے پہلے قرارداد ختم نبوت اسمبلی میں پیش کرنے پر میجر( ر ) محمد ایوب اور ممبران اسمبلی کو خراج تحسین و عقیدت پیش کیا انہوں نے کہا کہ ن لیگ کی موجودہ حکومت وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان ،کابینہ اور تمام اراکین اسمبلی کو سعادت ملی کہ انہوں نے 26اپریل2017 کوآزادجموں وکشمیر کی قانون سازاسمبلی میں تحفظ ناموس رسالت کے حوالے سے راقم کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد کو اتفاق رائے سے منظور کیا۔اور6 فروری کواس قراردادکوقانونی شکل دے کرآزادکشمیرمیں قادیانی فتنے کاراستہ بندکردیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں