ہمارے بارے میں 

صحافت میں دن بدن نت نئی چیزیں سامنے آ رہی ہیں، جیسے کہ خبروں کو سیاق و سباق سے ہٹ کر پیش کرنا، ذاتی مفادات کیلئے خبروں کو چلانا وغیرہ۔
ابلاغی ادارے اب خبر تک پہنچنا نہیں چاہتے بلکہ پروپیگنڈہ کا حصہ بنتے نظر آ رہے اورصحافت کی آڑ میں تجارتی معائدے کرنا شروع کر دیے ہیں۔ اس وجہ سے کچھ اہم اطلاعات اور خبریں عوام تک پہنچ ہی نہیں پاتی ہیں کیونکہ ابلاغی ادارے کسی خاص شخص یا ادارے کو نفع پہنچانے کے مقصد سے سامنے لانا ہی نہیں چاہتے۔ آہستہ آہستہ ہی سہی لیکن عوام سمجھنا شروع ہو گئے ہیں کہ صحافت خطرے میں پڑ رہی ہے۔ عام لوگوں کا میڈیا سے اعتماد کم ہو رہا ہے۔میڈیا جو کہ جمہوریت کا چوتھا ستون ہونے کا دم بھرتا ہے اب اعتماد کھوتا جا رہا ہے۔
ایک ادارے کی شکل میں ”ورلڈ ویوز اردو“ کا قیام مفاد عامہ اور جمہوری اقدار کے مطابق چلنے کیلئے پابند ہے۔ خبروں کے تجزیوں اور ان پر تنقید کرنے کے علاوہ ہمارا مقصد روایتی تصور کو بچائے رکھنے کا بھی ہے۔
اس مقصد کی طرف ہمارا یہ چھوٹا سا قدم ہے۔ قارئین سے بس اتنی سی گزارش ہے کہ ہمیں پڑھیں، شئیر کریں اور اس کے علاوہ اس کو بہتر بنانے کیلئے قیمتی مشوروں اور آرا سے نوازیں۔
اس کے ساتھ اگر آپ لکھنے کا شوق رکھتے ہیں تو۔۔۔ قلم اٹھائیں، ہمیں لکھیں، ۔۔۔۔ پر بھیجیں۔ ہم شائع کریں گے۔