سپیکر آزادکشمیر اسمبلی وزات عظمیٰ کے حصول کے لیئے ایک بار پھر متحرک

اسلام آباد

سپیکر اسمبلی چوہدری انوار الحق نے وزیراعظم بننے کیلئے ایک بار پھر کوششیں شروع کردی ہیں بیرسٹر سلطان کی جانب سے انکار کے بعد پیپلزپارٹی کی حمایت حاصل کرنے کیلئے سرگرم ہو گئے صدر پیپلزپارٹی چوہدری محمد یٰسین کے والد کی تعزیت کا جواز بناکر ان کی رہائش گاہ پر پہنچ گئے اور سیاسی امور پر سیر حاصل گفتگو کی
ذرائع کے مطابق انہوں نے چوہدری یٰسین سے وزارت عظمی ٰ حاصل کرنے کیلئے حمایت کرنے کیلئے کہا جس پر چوہدری یٰسین نے واضح جواب نہیں دیا۔
واضح رہے کہ چوہدری انوار الحق قبل ازیں صدر آزادکشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری سے بھی اس قسم کا مطالبہ کرچکے ہیں لیکن بیرسٹر سلطان نے کسی بھی معاملے میں ان کا ساتھ دینے سے معذرت کرلی تھی جس پر چوہدری انوار الحق کی وہ کوششیں ناکام ہو گئی تھیں اب وہ دوبارہ متحرک ہو گئے ہیں ۔

ذرائع کے مطابق آزادکشمیر کے دو حکومتی اراکین وزیرتعمیرات چوہدری اظہر صادق اور اوورسیز ایم ایل اے محمد اقبال کی دو روز قبل چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے ساتھ ملاقات کی تھی جس کے بعد آزادکشمیر میں ایک بار پھر عدم اعتماد کی افواہوں نے زور پکڑ لیا تھا جس کے بعد سپیکر چوہدری انوار الحق یہ تاثر دینا شروع ہو گئے ہیں کہ اگر پارٹی نے ان کے بغیر کسی کو قائد ایوان نامزد کیا تو وہ اپنے ہم خیال اراکین اسمبلی کے ساتھ مل کر اپوزیشن کے ساتھ مل جائیں گے۔

واضح رہے کہ چوہدری انوارالحق ماضی میں پیپلزپارٹی میں رہے اور مرکزی قیادت کے ساتھ رابطے میں تھے محترمہ فریال تالپور نے انہیں گڈ گورننس کا چیئرمین مقرر کیا تھا حالیہ انتخابات سے چند روز قبل پی ٹی آئی میں شامل ہوئے تھے پہلے وزیراعظم سردار قیوم نیازی کے خلاف سازشیں کرتے رہے اور سردار تنویر الیاس کے پرجوش حمایتی تھے اور مبینہ طور پر سردار تنویر الیاس سے اس حمایت کے عوض کروڑوں روپے بھی الئے تھے جب مزید مطالبات پورے ہونے بند ہوئے تو سردار تنویر الیاس کی بھی مخالفت شروع کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں