چئیرمین جموں کشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس ڈاکٹر نذیر گیلانی کی اے پی ایچ سی آفس آمد’ قضیہ کشمیر پر محمد حسین خطیب کی بریفنگ

اسلام آباد (ورلڈ ویوز اردو) چئیرمین جموں کشمیر کونسل فار ہیومن رائٹس ڈاکٹر نذیر گیلانی نے کل جماعتی حریت کانفرنس اسلام آباد دفتر کا دورہ کیا اور حریت قیادت سے ملاقاتیں کی ۔حریت قائدین میں گیلانی گروپ کے کنوینر عبداللہ گیلانی، میرواعظ گروپ کے کنوینر فیض نقشبندی اور جنرل سیکرٹری APHC محمد حسین خطیب سمیت دیگر رہنما شامل تھے۔
اس موقع پر محمد حسین خطیب کا کہنا تھا کہ قضیہ جموں وکشمیر کے حل کے لیے ہمیں مشترکہ لائحہ عمل طے کرنا ہوگا، اقوام متحدہ کی قراردادیں راستہ ضرور ہیں مگر منزل نہیں ہیں، ہمیں منزل کا تعین کرنا ہوگا ۔انہوں نے کہا ہم مذید 73 سال اسی حالت میں نہیں گزار سکتے ۔اسکے علاوہ حریت کو فعال کرنے اور ایکتا کرنے کے اقدامات کی اشد ضرورت ہے آپسی اتحاد کامیابی پہلی سیڑھی ہے انہوں نے ریاست کی ہر قوم کو ساتھ چلانے کی بھی تجویز دی۔ ڈائسپورہ کی کارکردگی پر انہوں نے گیلانی صاحب کو کہا کہ ڈائسپورہ اپنی زمداریوں کو نبھانے میں ناکام رہا ہے امید ہے آپ قوم کی توقعات پر پورا اترنے میں ہر ممکن کوشش کرینگے
اس موقع پر حسین خطیب نے جموں مسلم قائدین کے گزشتہ دنوں عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں خطے کے دورے بارے نذیر گیلانی کو بریف کیا ۔انہوں نے کہا جموں کی اہمیت کو سمجھنا وقت کی ضرورت ہے جموں کو نظر انداز کرکے کامیابی کا تصور بے معنی ہے ۔
محمد حسین خطیب نے مذید کہا ہمیں مشترکہ لائحہ عمل لیکر آگے بڑھنا چاہیے ،ہمارا پہلا اور آخری مطالبہ حق خودارادیت کا حصول ہونا چاہیے ۔
ڈاکٹر نذیر گیلانی نے اس موقع پر محمد حسین خطیب کے مشترکہ لائحہ عمل کی تجویز کو سراہا اور کہا ہمیں اپنے ماضی سے سابق سیکھنا ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں