تحریک انصاف حکومت کی کفائت شعاری مہم ختم۔ وزیراعظم آزاد کشمیر ہاؤس کے لیے کروڑوں کا فرنیچر خریدنے کی تیاریاں

اسلام آباد (سٹی رپورٹر) آزاد کشمیر کے وزیراعظم نے پرانے وزیراعظم ہاؤس کے بجائے نئے وزیراعظم ہاوس میں رہائش رکھنے کا فیصلہ.کیا ہے جسکی تزئین وآرائش کی جارہی ہے۔ایوان وزیراعظم کے لیے کروڑوں روپے کا فرنیچر خریدنے کی تیاریاں جبکہ موجودہ ایوان وزیراعظم سئنیر وزیر کو دینے کا فیصلہ اور موجودہ ایوان وزیراعظم کی بھی از سر نو تزئین وآرائش کی جائے گی۔ ذرائع ۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف انتخابات سے قبل کفائت شعاری کے بلند وبانگ دعوے اور اعلانات کر رہی تھی حکومت بنتے ہی رویے بدلنا شروع ہو گئے۔حکومت کے کفایت شعاری کے دعووں کا پول کھل گیا، شاہانہ ٹھاٹھ باٹھ برقرار رکھنے کے لیے سرکاری خزانے سے اربوں روپے خرچ کرنے کی تیاریاں مکمل، نوتعمیر شدہ ایوان وزیراعظم مظفرآباد کے لیے کروڑوں کا نیا فرنیچر خریدنے کا فیصلہ، پرانا وزیراعظم ہاؤس سینیئر وزیر کو دینے کا فیصلہ۔زرائع کے مطابق نو تعمیر شدہ ایوان وزیراعظم مظفرآباد جو کہ مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں کورونا ہسپتال کے طور پر کام کررہا تھا اور وزیراعظم آزادکشمیر پرانے وزیراعظم ہاؤس میں رہتے تھے موجودہ حکومت نے نو تعمیر شدہ ایوان وزیراعظم میں قائم کورونا ہسپتال ختم کرکےکروڑوں کی لاگت کا نیا فرنیچر خریدنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ پرانا وزیراعظم ہاؤس سینئر وزیر کو دینے کا فیصلہ ہوا ہے۔واضح رہے کہ سینیئر وزیر حکومت گزشتہ روز سرکاری خزانے سے تنخواہ اور الاؤنس نہ لینے کا اعلان کرچکے ہیں اور حکومتی سطح پر کفایت شعاری کے دعوے بھی کرچکے ہیں اور ایسا پہلی بار ہورہا ہے کہ کسی بھی سینئر وزیر کو وزیراعظم ہاؤس ہی دیا جارہا ہے، زرائع کا کہنا ہے عوامی توجہ حاصل کرنے کے لیے حکومتی وزراء کفایت شعاری اور عوامی خدمت کے دعوے کررہے ہیں لیکن دوسری جانب الیکشن مہم میں خرچ کیا گیا پیسہ وصول کرنے کی پوری تیاریاں ہوچکی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں