سانحہ گوگڈار میں ملوث افراد کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے۔ خواجہ نعمان الحق

راولپنڈی (ورلڈ ویوز اردو)سابق اسسٹنٹ ایڈوکیٹ جنرل پنجاب خواجہ نعمان الحق ایڈوکیٹ نے سانحہ گگڈار کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوے کہا ہے کہ قانونی اداروں کو اپنا کام کرنے دیا جائے اور سستی شہرت حاصل کرنے کیلیے بیان بازی نہ کی جائے ۔اپنے خصوصی بیان میں انہوں نے غمزدہ خاندانوں سے تعزیت کا اظہار کیا ۔انہوں نے کہا کہ مظلوم خواتین کے قاتلوں کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کیلیے حکومت تمام تر وسائل کو بروئے کار لائے ۔انہوں نے کہا کہ پونچھ ڈویژن کے دونوں اعلی افسر کمشنر مسعود الرحمان اور ڈی آئی جی سردار نعیم بہت ہی اچھی شہرت کے حامل ہیں اور مجھے پورا یقین ہے کہ قاتل بچ نہیں پائیں گے۔انہوں نے کہا کہ یہ جو سانحہ پےیہ دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے اس میں دہشت گردی کی دفعہ لگائی جائے اور دہشت گردی کے تحت ٹرائل کیا جائے اور قاتلوں کو نشان عبرت بنایا جائے تاکہ آئندہ کوئی شخص یا گروہ ایسا کرنے کی سوچ بھی نہ سکے۔ ۔انہوں نے کہا کہ قاتلوں کا کوئی قبیلہ ،برادری ،نصب یا علاقہ نہیں ہوتا قانون کی نظر میں وہ مجرم ہوتے ہیں اس لئے قاتلوں کو کسی مخصوص طبقے ،برادری یا قبیلے سے جوڑنا مناسب نہیں ہے ۔انہوں نے کہا حویلی کا ہر باسی ان مظلوم خواتین کے خاندان کے ساتھ ہے یہ سراسر بربریت ہے جس کی کسی معاشرے میں گنجائش نہیں ہے ۔انہوں نے کہا یہ واقعہ حکومت کیلیے بھی ایک چیلنج ہے کہ وہ قاتلوں کو کتنا جلدی گرفتار کرتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ قانونی اداروں کو آزادانہ طور پر اپنا کام کرنے دیا جائے اور خود منصف بننے اور بیان داغنے کی کوشش نہ کی جائے تاکہ قاتلوں کو قانون کے مطابق اپنے انجام تک پہنچایا جا سکے.

اپنا تبصرہ بھیجیں