عباسپور کھلی درمن سڑک کھنڈارات کا منظر پیش کرنے لگی

عباسپور(سائرہ چغتائی) عباسپور سے براستہ کوٹ کوئیاں نمجر کھلی درمن روڈ کھنڈرات کا منظر پیش کرتے ہوئے آج کے اس جدید دور میں جہاں دنیا چاند پر قدم جما چکی ہے ترقی کے نت نئے طریقے دریافت ہوچکے ہیں لیکن عوام علاقہ یوسی کھلی درمن آج بھی بنیادی حقوق سے محروم ہیں جہاں سفری سہولیات میسر نہیں کھلی درمن نمجر روڈ کی یہ صورتحال ہے جدھر گدھے بھی چلنے کے قابل نہیں کوئ بیمارہوجائے تو ہم اسے کندھوں پر لاد کر ہسپتال لیجاتے ہیں مون سون کی بارشوں میں پھر سے عوام علاقہ کو وہی پرانا راستہ عباسپور سے بھنگوال کھلی درمن والا اختیار کرنا پڑیگا اس روڈ کی صورتحال گزشتہ بارشوں میں اس قدر خراب ہوگی کے کسی بھی وقت کوئ بڑا حادثہ رونما ہوسکتا ہے ۔پانچ سال تک منظر عام سے غائب رہنے والے سیاستدان جوالیکشن کے قریب ہرشادی ،جنازے،اوربیمار کے گھر اچانک نمودار ہوجاتے ہیں اورہمدرریاں حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں ان کیلئے باعث شرم کا مقام ہے ۔موجودہ وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر بھی اس سڑک کا وزٹ کرچکے ہیں جب نمجر پل کا افتتاح کرنے گئے تو اسی سڑک سے وہ گزر کر گئے لیکن ان کے کانوں تک بھی جوں نہیں رینگی جن سیاستدانوں کو ووٹ دیکر منتخب کیا جاتا ہے پانچ سال بعد ایک نئے سیاستدان کا جھنڈا اٹھاکر ایک نئ امید کیساتھ نعرے لگاتے بھنگڑے ڈالتے اپنی زندگی گزار رہے ہیں اور ہمیں سفرکی سہولیات بھی میسر نہیں اور حکمرانوں کے پاس کڑوروں کی گاڑیاں ہیں جن کے پٹرول کا خرچہ بھی ہماری جیب سے جاتا ہے اورہمارے ٹیکس سے ان کے خاندان عیاشیاں کررہے ہیں کوئ بیمار ہو جائے ہم اسے کندھوں پر لاد کر ہسپتال لیجاتے ہیں اور اکثر مریض راستے میں ہی دم توڑجاتے ہیں اور اکثر ہسپتال میں مرہم پٹی تک دستیاب نہیں ہوتی آج کے اس دور میں بھی حلقہ نمبر1 کی عوام بنیادی انسانی ضروریات سے محروم ہے عوام علاقہ نے وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان حلقہ نمبر کے منسٹر چوہدری یاسین گلشن سے مطالبہ کیا کہ اس جہاں من پسند لوگوں کو سڑکیں نوازی ہیں وہاں ایک مہربانی ادھر بھی کردیں اس سڑک کی رپئرینگ کرواکرعوام کو سفری سہولیات فراہم کی جائے ۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں