اساتذہ کی قلم چھوڑ ہڑتال دوسرے روز میں داخل، ریاست بھر کے اساتذہ کا اپ گریڈ ہونے تک تدریسی بائیکاٹ جاری رکھنے کا اعلان

مظفرآباد(ورلڈ ویوز اردو) اساتذہ کی قلم چھوڑ ہڑتال دوسرے روز میں داخل، ریاست بھر کے تعلیمی اداروں میں اساتذہ کا قلم چھوڑ اور تدریسی عمل کا بائیکاٹ جاری۔ ملک کے چاروں صوبوں میں تعلیمی پالیسی کے تحت اساتذہ کے سکیل اپ گریڈ ہو چکے ہیں لیکن اس کے برعکس ریاستی اساتذہ کی نہ اپ گریڈیشن کی گئی نہ بنیادی تنخواہ میں اضافہ کیا گیا۔ اساتذہ کا اپ گریڈ ہونے تک تدریسی بائیکاٹ جاری رکھنے کا اعلان۔ متحدہ ٹیچر ز آرگنائزیشن ، قلم پینل ، ٹیچرز سکولز آرگنائزیشن نے آزادکشمیر بھر کے اساتذہ سے اپیل کی ہے کہ تنخواہوں میں اضافے سمیت اپ گریڈ ہونے تک اساتذہ ہڑتال جاری رکھیں گے ۔ وزیراعظم آزادکشمیر اساتذہ یونین کے نمائندوں سے آج ملاقات کرینگے ۔جس میں وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر کے سامنے اساتذہ اپنا مقدمہ پیش کرینگے۔ اساتذہ تنظیموں نے کہا کہ طلباء و طالبات کا جو تعلیمی حرج ہو رہا ہے اس کی ذمہ داراساتذہ نہیں بلکہ حکومت ہے۔ حکومت اپنے وعدوں کے برخلاف پالیسی پر گامزن ہے، جب تک اساتذہ کو ان کا بنیادی حق نہیں مل جاتا تب تک وہ قلم چھوڑ ، تدریسی عمل کا بائیکاٹ جاری رکھیں گے۔ اساتذہ تنظیموں کے نمائندوں نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہ بچوں کے امتحانات نزدیک ، حکومت کے جانے کے دن بھی قریب ہیں اس نازک صورتحال کے پیش نظر حکومت کو ان کے جائز اور اصولی مطالبات تسلیم کرنا پڑینگے۔ پرائمری جو کہ 07کو 14اور جونئیر جو09میں کو 16سکیل میں اپ گریڈ کیا جائے۔ حکومت کے پاس وسائل کی کمی نہیں اس لئے ضروری ہے کہ اساتذہ کے جائز مطالبات تسلیم کئے جائیں۔ وزیراعظم آزادکشمیراپنا وعدہ پورا کریں ، بیوروکریسی اساتذہ کے راہ میں رکاوٹیں نہ ڈالے، غلط بریفنگ ،کراس فگرس کی بنیاد پر اساتذہ کی اپ گریڈ یشن نہ ہونے دینا ظلم عظیم ہے۔ سیکرٹری مالیات کی طرف سے وزیراعظم آزادکشمیر کو غلط بریف کیا گیا اور جو تخمینہ بتایا گیا وہ حقیقت کے برعکس ہے ۔ اساتذہ قوم کے معما ر ، این ٹی ایس کوالیفائیڈ اساتذہ اس مہنگائی کے دور میں قلیل تنخواہ میں اپنے گھر کو نہیں چلا سکتے ،حکومت نے دوسری طرف کلرکوں ، خانساموں کے سکیل اپ گریڈکئے لیکن قوم کے معماروں کو سرخ بتی کے پیچھے لگا رکھا ہے۔آزادکشمیر بھر کے اساتذہ جانفشانی ، محنت اور ایمانداری سے اپنا کام سر انجام دے رہے ہیں اور انتہائی قلیل تنخواہ اور مہنگائی کے اس دور میں ان کا گزارہ ممکن نہیں۔ حکومت پاکستان میں چاروں صوبوں کی طرح آزادکشمیر میں اساتذہ کے پے سکیل اور تنخواہ میں اضافہ کرنے کا نوٹیفیکیشن جاری کرے تا کہ اساتذہ مالی پریشانی سے بچ سکیں۔ 6جنوری کی ہڑتال اور 16فروری کا تدریسی عمل کا بائیکاٹ اس بات کا غماز ہے کہ اساتذہ حکومت کی اساتذہ کش پالیسیوں سے تنگ آ چکے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں