بیرسٹر سلطان قابل احترام ہیں، میں انکے لیے خطرہ نہیں ہوں؛ ماجد خان

بیرسٹر سلطان محمود کی پوزیشن کو کوئی خطرہ نہیں ہے؛ ماجد خان


بیرسٹر سلطان مجھے اپنے لیے خطرہ سمجھتے ہیں لیکن میں خطرہ نہیں ہوں؛ ماجد خان


راجہ فاروق حیدر نے جن کو الٹا لٹکانے کی باتیں کی اقتدار میں آکر انہی کو نوازا؛ ماجد خان

اسلام آباد(علی حسنین نقوی ) پاکستان تحریک انصاف آزاد کشمیر کے جنرل سیکرٹری ماجد خان نے کہا ہے آزاد کشمیر میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت عوام کو ریلیف دینے میں بری طرح ناکام ہوئی ہے، راجہ فاروق اقتدار میں آکر اپنے الیکشن مینفسٹو کے بالکل برعکس چلے ہیں، عوام نے دیکھا کہ کرپشن اور اقرباء پروری عروج پر رہی ہے، راجہ فاروق حیدر الیکشن سے پہلے جنہیں الٹا لٹکانے کی باتیں کرتے تھے جب اقتدار میں آئے تو انہی کو نوازنے لگے۔
ان خیالات کا اظہار ماجد خان نے ایک خصوصی انٹرویو میں کیا۔ماجد خان کا کہنا تھا کہ راجہ فاروق حیدر کی حکومت کی کارستانیاں زبان زد عام ہیں، گورکھ دھندہ پروگرام میں انہی کے سینئر وزیر کا کہنا تھا کہ بڑے عہدوں پر چھوٹے لوگ براجمان ہوگئے ہیں ۔
قضیہ جموں وکشمیر کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں طاقت سے عوام کی آواز دبانے کی کوشش کی ہے، وزیراعظم پاکستان نے ہر فورم پر کشمیر کی نمائندگی کی اور کشمیریوں کے حقیقی سفیر ہونے کا حق ادا کیا ہے، گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے سے مسئلہ کشمیر پر کوئی اثر نہیں پڑتا کیونکہ یہ سیٹ اپ عبوری ہوگا ختمی فیصلہ رائے شماری کے ذریعے ہی ممکن ہے ۔
پی ٹی آئی میں اختلافات اور سٹیرنگ کمیٹی کے حوالے سے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پارٹی منظم ہے، چھوٹے موٹے اختلافات ہر جماعت میں ہوتے ہیں اختلاف جمہوریت کا حسن ہیں، پارٹی میں ایک ہی بندے کی پالیسی ہے اور وہ عمران ہیں، انہوں نے کہا میں کسی کیمپ کا حصہ نہیں ہوں میرا ایک ہی کیمپ ہے اور وہ کیمپ عمران خان کا کیمپ ہے، انہوں کہا سٹیرنگ کمیٹی میں نام نہ آنا میرے لیے معنی نہیں رکھتا، کمیٹیوں میں لوگوں کے نام آتے بھی ہیں اور نکل بھی جاتے ہیں ۔
پیراشوٹر کی آمد سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہر کسی کو سیاست کا حق ہے، الیکشن لڑنے کا بھی ہی حق ہے لیکن کسی کے آنے سے بیرسٹر سلطان محمود کی پوزیشن کو کوئی خطرہ نہیں کیونکہ فیصلہ کا اختیار صرف عمران خان کو ہے ۔
انہوں نے کیا بیرسٹر سلطان میرے لیے قابل احترام ہیں اگر وہ مجھے اپنے لیے خطرہ سمجھتے ہیں تو وہ مجھ سے پوچھ لیتے، میں بیرسٹر سلطان کے لیے کبھی بھی خطرہ نہیں ہوں، میں ایک بے ضرر آدمی ہیں ۔
انہوں نے مذید کہا الیکشن کی بھرپور تیاری کررہے ہیں عمران خان کی پالیسی کے مطابق پارٹی منظم ہے اور آزاد کشمیر میں حکومت بنائے گی ۔حکومت میں آکر عوامی فلاح کو ترجیح بنائیں اور آزاد کشمیر کو حقیقی معنوں میں بیس کیمپ بنائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں