گلگت بلتستان کو عبوری صوبے کا درجہ دینے سے پاکستان کا کشمیرپر موقف کمزور ہو گا; خالد محمود

تارکین وطن نے مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کیلئے بھرپور کردار ادا کیا،اس کام کو مزید منظم کر نے کی ضرورت ہے
پاکستان کے حکمران کشمیریوں کے وکیل اور فریق ہونے کے ناطے بھرپور کردار ادا کرتے،استقبالیہ سے خطاب
اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) جماعت اسلامی آزادجموں وکشمیر کے امیر ڈاکٹر خالد محمود خان نے کہا ہے کہ تارکین وطن نے مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر بھرپور انداز سے اجاگر کیا،نریندرمودی کے 5اگست کے اقدامات کے بعد اسلام آباد سے تا حال جوابی حکمت عملی کا نہ آناتشویش کا باعث ہے،کشمیریوں نے 1947ء بے مثال جہاد کے ذریعے یہ خطہ آزاد کروایا،ہندوستان کے اندر مسلمانوں سمیت کوئی بھی اقلیت محفوظ نہیں ہے مودی کی فاشسٹ حکومت دنیا میں بے نقاب ہو چکی ہے کشمیری وحدت اور حق خودارادیت پر کوئی کمپرمائز نہیں کریں گے،گلگت بلتستان کو عبوری صوبے کا درجہ دینے سے عالمی سطح پر پاکستان کا کشمیرپر موقف کمزور ہو گا،ان خیالات کااظہار انہوں نے چیئرمین جموں کشمیر فورم فرانس چوہدری نعیم اور تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر فہیم کیانی کے اعزاز میں دئیے گئے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل تنویر انور خان،چیئرمین جموں کشمیر فورم فرانس چوہدری نعیم،تحریک کشمیر برطانیہ کے صدرفہیم کیانی نے گفتگو کی،تقریب میں مرکزی نائب امیر جماعت اسلامی راجہ جہانگیر خان،معروف صحافی اسلم میر،غلام محی الدین ڈار سمیت دیگر قائدین موجودتھے،تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر خالدمحمود خان نے کہاکہ تارکین وطن نے مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کے لیے بھرپور کردار ادا کیا جس پر پوری قوم خراج تحسین پیش کرتی ہے اس کام کو مزید منظم کرنے کی ضرورت ہے تا کہ عالمی سطح پر حمایت حاصل کر کے ہندوستان کے مظالم کو بے نقاب کیا جائے،انہوں نے کہاکہ نریندرمودی مقبوضہ کشمیر میں مظالم کی انتہا کررہا ہے اسلام آباد میں بیٹھے حکمرانوں کی ذمہ داری تھی کہ وہ کشمیریوں کے وکیل اور فریق ہونے کے ناطے بھرپور کردار ادا کرتے لیکن اسلام آباد سے کماحقہ کردار ادا نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے مقبوضہ کشمیر کے اندر مایوسی کا پیغام جا رہا ہے انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کشمیریوں کی پشتیبان ہے اور رہے گی کشمیریوں کی پاکستان سے توقعات وابستہ ہیں تحریک آزادی کشمیر کو منز ل سے ہمکنار کرنے کے لیے مظفرآباد اور اسلام آباد نے فیصلہ کن کردار ادا کرنا ہے لیکن یہ کردار ابھی تک دیکھنے میں نہیں آرہا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے فہیم کیانی نے کہاکہ کشمیرکی آزادی مظفرآباد اور اسلام آباد سے ہو کر گزرتی ہے تحریک کشمیر برطانیہ نے سفارتی محاذ پر بھرپور کردار ادا کیا اور صبح آزادی تک کرتی رہے گی،ہندوستان نے عالمی قوانین کی خلا ف ورزی کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کی سازش شروع کررکھی ہے جو کہ جنیوا کنونشن اور دیگر عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے کوئی بھی جارح قبضہ تو کرتا ہے لیکن قبضہ کر کے آبادی کے تناسب کو تبدیل نہیں کرسکتا بھارت آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کی گھناؤنی سازش میں مصروف ہے کشمیریوں کی معیشت کو تباہ کر کے کشمیریوں کو سرنڈر کرنے پر مجبور کررہا ہے اس موقع پر چیئرمین جموں کشمیر فورم فرانس چوہدری نعیم نے کہاکہ آزادکشمیر اور پاکستان کی قیادت مسئلہ کشمیر پر اتفاق اور اتحاد پیدا کرتے ہوئے ایک ہی موقف عالمی سطح پر پیش کرے تو اس کے نتیجے میں عالمی برادری کشمیرپربات سنے

اپنا تبصرہ بھیجیں