مسلم لیگ( ن) آزاد کشمیر کی ایک رہنما پارٹی چھوڑ کر پی ٹی آئی میں شامل

اسلام آباد(ورلڈ ویوز اردو)بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مسلم لیگ ن کی اہم وکٹ حاصل کر لی۔مسلم لیگ ن آزاد کشمیر ویمن ونگ کی ایڈیشنل جنرل سیکریٹری وتنظیم الاعوان آزاد کشمیر کی چئیرپرسن عندلیب اکبرمسلم لیگ ن سے مستعفی ہو کر اپنے خاندان ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی کشمیر میں شامل ہوگئیں۔اس بات کا اعلان انھوں نے آج یہاں پی ٹی آئی کشمیر کے مرکزی سیکریٹیریٹ گلبرگ اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب میں آزادکشمیر کے سابق وزیراعظم و صدر پی ٹی آئی کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی موجودگی میں کیا۔ اس موقع پر کوٹلی حلقہ 1 سے مصباح اسرار نے بھی پی ٹی آئی کشمیر میں شمولیت کا اعلان کیا۔اس موقع پر تقریب میں بیگم امتیاز نسیم، عنبرین ترک،گلشن منہاس، ناہید ایوب راجہ ایڈووکیٹ، سکینہ سدوزئی، سیمی شیرازی،سید رشید شاہ کاظمی، سردار ماجد شریف، منیر اعوان،مفتی عبدالواجد، خواجہ ظفر شہزاد، خواجہ بشیر اور دیگر بھی موجود تھے۔اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آزادکشمیر کے سابق وزیراعظم و صدر پی ٹی آئی کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ میں عندلیب اکبر کو کو پارٹی میں شمولیت پر خوش آمدید کہتاہوں اوران کی شمولیت سے پارٹی کو تقویت ملے گی۔ جس طرح لوگوں کی بڑی تعداد جوق در جوق پی ٹی آئی کشمیر میں شامل ہو رہی ہے اس سے ثابت ہوتا ہے کہ عوام پی ٹی آئی کشمیر کو آزاد کشمیر میں اقتدار میں دیکھنا چاہتے ہیں۔ پی ٹی آئی کشمیر اقتدار میں آکر وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق خواتین کوبااختیار بنانے کے لئے اقدامات کرے گی اور خواتین کی آزاد کشمیر اسمبلی میں نشستیں بڑھائے گی اور انہیں اسمبلی میں تینتیس فیصد نمائندگی دے گی تاکہ خواتین معاشرے میں اپنا فعال کردار ادا کریں اور دیگر خواتین کے حقوق کے لئے آگے بڑھیں۔انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کشمیر اس وقت آزاد کشمیر کے عوام کی واحد نمائندہ جماعت ہے۔ جبکہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے عوامی حقوق کا استحصال کیا ہے۔وزیر اعظم عمران خان نے لائن آف کنٹرول کے متاثرین کے لئے ساڑھے تین ارب کا پیکج دیا جبکہ اسی طرح احساس پروگرا، انصاف ہیلتھ کارڈ، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سمیت عوامی فلاح و بہبود کے دیگرمنصوبے بھی آزاد کشمیر میں متعارف کرائے تاکہ عوام کو تعلیم، صحت کی سہولتیں بھی میسر آسکیں اور عوام کا معیار زندگی بھی بہتر ہو سکے.

اپنا تبصرہ بھیجیں