جامعہ کوٹلی کے رجسٹرار فہیم غضنفر نے مبینہ طور پر خلاف قواعد اشتہار جاری کرنے کے معاملے پر راہ فرار اختیار کرلی۔

اشتہار جاری ہوگیا ہے تو اب کونسا موقف؟ ‘فہیم غضنفر
یونیورسٹی بند ہے تو کیسا موقف؟ فہیم غضنفر

اسلام آباد (ورلڈ ویوز اردو/راجہ قیصر ایوب) جامعہ کوٹلی آزاد کشمیر کے رجسٹرار نے مبینہ طور پر خلاف قواعد رجسٹرار کی تعیناتی کے لیے تیسری مرتبہ اشتہار جاری کیے جانے کے معاملے پر راہ فرار اختیار کرلی ۔
“ورلڈ ویوز اردو” نے رجسٹرار کوٹلی یونیورسٹی فہیم غضنفر سے جب رجسٹرار تعیناتی معاملے اور مبینہ طور خلاف قواعد تیسر بار اشتہار جاری کیے جانے کے معاملے پر موقف لینا چاہا تو تو انہوں نے کہا

“اشتہار جاری کردیاگیا ہے تو اب کونسا موقف؟ “

“ورلڈ ویوز اردو نے سوال کیا کہ اشتہار کے بارے میں خبریں چل رہی ہیں کہ یہ خلاف قواعد ہے اسی حوالے سے آپ سے موقف لینے کے لیے آپ کو کال کی گئی ہے تو تو رجسٹرار کوٹلی یونیورسٹی کا کہنا تھا کہ

“یونیورسٹی بند ہے کھلے گی تو موقف دونگا”

۔سوال کیا گیا کہ یونیورسٹی بند ہے تو اشتہار کیسے جاری ہوا؟ اس پر رجسٹرار کوٹلی یونیورسٹی نے یہ کہہ کر اجازت چاہی کہ میں مصروف ہوں گھر بعد میں بات کرتے ہیں ۔ورلڈ ویوز اردو نے مذکورہ معاملے پر دوبارہ رجسٹرار کوٹلی

یونیورسٹی سے دوبارہ رابطہ کرنے کی کوشش کی تو انہوں نے کال نہیں اٹھائی ۔


رجسٹرار جامعہ کوٹلی کا یہ کہہ کر راہ فرار اختیار کرنا کہ یونیورسٹی بند ہے اور وہ دستیاب نہیں ہیں، رجسٹرار یونیورسٹی کا فل ٹائم ملازم ہوتا ہے اور متنازع معاملات پر راہ فرار اختیار کرنا بے شمار سوالات کو جنم دیتا ہوہو۔
واضح رہے کہ اس سے قبل جامعہ کوٹلی میں مبینہ طور پرمن پسند شخصیات کو نوازنے کیلئے خلاف قواعد اقدامات کا انکشاف ہوا تھا،رجسٹرار کی تعیناتی کیلئے تیسری بار اشتہار جاری کیا گیا ۔پہلی بار 2017، 2019 میں دوسری بار سلیکشن بورڈ کیلئے اشتہار دیا گیا تھا، یونیورسٹی کے اس خلاف قواعد اقدام کو شکوک و شبہات کی نظر سے دیکھا جانے لگا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں