سوپور میں ہونے والے واقعہ پر 3 سالہ بچے کی گواہی مودی حکومت کی بربریت کا منہ بولتا ثبوت ہے ‘جموں کشمیر فریڈم موومنٹ(فورم)

جموں(ورلڈ ویوز اردو) جموں کشمیر فریڈم موومنٹ (فورم) نے گزشتہ روز سوپور میں ہونے والے انسانیت سوز واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا سیکولر بھارت کے دعویداروں کا چہرہ 3 سالہ معصوم بچے نے ساری دنیا کے سامنے بے نقاب کردیا ہے۔جموں کشمیر فریڈم موومنٹ کے چیئرمین شریف سرتاج، پیرپنجال پیس فاؤنڈیشن کے چیئرمین حنیف کالس، پیرپنجال سول سوسائٹی کے چیئرمین مولانا امیر محمد شمسی، انجمن سیرت کمیٹی کے چیئرمین قیوم متو ،جموں کشمیر یوتھ فورم فار جسٹس کے چیئرمین ملک ارشاد احمد اور دیگر نے اپنے مشترکہ مذمتی بیان میں کہا کہ جموں کشمیر میں اسطرح کے واقعات تو اب معمول کی بات ہوگئی ہے لیکن کل کے واقعہ کی جسطرح کی تصاویر وائرل ہوئی ہیں وہ انسانی حقوق کے علمبرداروں کا ضمیر جھنجھوڑنے کے لیے کافی ہیں ۔3 سالہ معصوم بچے کے سامنے اسکے نانا کو شہید کردیا جاتا ہے اور اور وہ بچہ اپنے نانا کی لاش پر بیٹھ کر روتا ہے آہ و بکا کرتا ہے اس منظر کودیکھ کر انسانیت بھی شرما گئی، یہ منظر کربلا سے کم نہیں ہے ۔
مشترکہ مذمتی بیان میں مذید کہا گیا کہ جموں کشمیر فریڈم موومنٹ انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں اور اقوام متحدہ سے اپیل کرتی ہے وہ اس ظلم کا نوٹس لے اور جموں و کشمیر کے لوگوں کو انکا بنیادی حق حق خودارادیت دلوائے ۔
واضح رہے کہ گزشتہ روزسوپور میں ایک فورسز اور عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپ میں ایک 70 سالہ سویلین کی شہادت ہوگئی تھی جسکی سوشل میڈیا پر تصویر وائرل ہوئی تصویر میں ایک بچہ میت پر بیٹھا روتا نظر آرہا تھا ۔بعد ازاں اسی بچے کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں یہ سننے کو مل رہا تھا کہ اس کے نانا کو فوجیوں نے گاڑی سے اتار کر گولیاں ماری تھیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں