اسلام آباد:وفاقی حکومت کا دعوؤں کا پول کھل گیا’اپوزیشن لیڈر آزاد کشمیر اسمبلی کو تمام تر کوششوں کے باوجود وینٹی لیٹر نہ مل سکا ۔۔

اسلام آباد (ثاقب راٹھور )وفاقی حکومت کے وینٹیلیٹر حوالے سے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے گئے اپوزیشن لیڈر آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی چوہدری یاسین کو تمام تر حکومتی اور سیاسی کوششوں کے باوجود اسلام آباد کے کسی بھی ہسپتال میں وینٹیلیٹر نہ مل سکا۔
بعد ازاں ایک نجی ہسپتال میں وینٹیلیٹر خالی ہوتے ہی وہاں شفٹ کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ دنوں کرونا وائرس کا شکار ہو گئے تھے. چوہدری یاسین وائرس کی تشخیص کے بعد گھر میں قرنطینہ تھے ، طبیعت زیادہ بگڑنے پر سانس لینے میں مشکلات کے باعث مختلف ہسپتالوں میں لے جایا گیا تھا لیکن ان کو کوئی وینٹی لیٹر نہ مل سکا تھا.تمام تر حکومتی اور سیاسی کوششوں کے باوجود وینٹیلیٹر نہ مل سکا. سابق وزیراعظم پاکستان راجہ پرویز اشرف اور چیف سیکریٹری آزادکشمیر کی کوشش بھی رائگاں گئی. ایک طرف تو حکومت دعوے کر رہی ہے کہ اب ہمارے پاس وینٹیلیٹرز کی کمی نہیں ہے. ہم نے کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے انتظامات مکمل کیے ہوئے ہیں. لیکن
دوسری طرف اپوزیشن لیڈر آزاد جموں و کشمیر قانون ساز اسمبلی چودھری محمد یاسین کی طبیعت زیادہ خراب ہونے پر پر پاکستان کے سابق وزیر اعظم جناب راجہ پرویز اشرف صاحب اور چیف سیکرٹری آزاد کشمیر کی طرف سے بھرپور کوشش کی گئی کہ ان کو کسی ہسپتال میں وینٹیلیٹر مل سکے اور وہاں پر منتقل کیا جا سکے. لیکن موذی مرض کے پھیلاؤ میں اضافے کی وجہ سے کسی بھی سرکاری یا پرائیویٹ ہسپتال میں کوئی بھی وینٹیلیٹر خالی نہیں تھا۔ جب کہ ہسپتال کے حکام کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس وینٹیلیٹرز کی شدید کمی ہے.اس وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کی وجہ سے ہسپتالوں کے وینٹیلیٹرز مصروف ہیں.اگر ایک ملک کے اپوزیشن لیڈر کے لیے کوئی وینٹیلیٹر دستیاب نہیں ہے ہیں تو عام مریضوں کا کیا علاج ہو گا. کافی تگ ودو کے بعد اپوزیشن لیڈر کو اسلام آباد کے ایک نجی ہسپتال میں وینٹیلیٹر پر منتقل کیا گیا ہے جس کے بعد ان کی طبیعت کافی بہتر ہونا شروع ہوگئی ہے.
چوہدری یاسین کے لواحقین کا کہنا تھا کہ حکومت سے مربوط نظام بنانا چاہیے تاکہ مریض کو اسپتال پہنچنے سے پہلے ہی وینٹی لیٹر کا بتا دیا جائے اور اسے اس اسپتال کا بتا دیا جائے جہاں وینٹی لیٹر ہے تاکہ مریض دربدر خوار نہ ہوں. اگر اس ایک ملک کے اپوزیشن لیڈر کو یہ سہولت نہیں مل سکی تو غریب عوام کا کیا حال ہو گا.چوہدری محمد یاسین کے فرزند چوہدری شاہنواز یاسین نے اپنے ایک بیان میں کشمیر ،پاکستان کے ساتھیوں،پاکستان پیپلزپارٹی کے عہدیداروں، جیالوں حلقے کے لوگوں، سماجی ،سیاسی ،اور صحافتی تمام شخصیات جنہوں نے قائد حزب اختلاف چوہدری محمد یاسین صاحب کی صحت کے متعلق ذاتی طور پر،فون کالز  پیغامات کے ذریعے رابطے میں رہے ان سب کا شکریہ ادا کرتے ہوے کہا ہے کے اللہ پاک کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ چوہدری یاسین صاحب پہلے سے بہتر ہیں اور وہ اسلام آباد کے ہی ایک نجی ہسپتال میں زیر علاج ہیں، اور انشاءاللہ جلد ہی مکمل صحت یاب ہوں گے ،چوہدری شاہنواز نے تمام افراد سے اپیل کی ہے کے وہ ہاسپٹل نہ آئیں کیونکہ کسی کو بھی ملنے کی اجازت نہیں ہے،آپ سب اپنی دعاؤں میں یاد رکھیں،کہ اللہ پاک میرے والد صاحب کو اور ان تمام افراد کو جو کرونا وائرس جیسے موذی مرض کا شکار ہیں جلد صحت یاب ہوں..

اپنا تبصرہ بھیجیں