غیر ملکی کرکٹرز کا پی ایس ایل کیلئے دوبارہ پاکستان آنے کا عزم

کراچی(سپورٹس ڈیسک)دوبارہ پاکستان آنے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے غیر ملکی کھلاڑیوں کی اکثریت نے پاکستان سپر لیگ سیزن پانچ کو بھرپور خراج تحسین پیش کیا ہے۔

پشاور زلمی کے ہیڈ کوچ ڈیرن سیمی کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث قبل از وقت اختتام کے باوجود پاکستان سپر لیگ کامیاب رہی،انشا اللہ دوبارہ ملیں گے،انگلش آل راؤنڈر روی بوپارا نے پاکستان میں کھیلنے کو زبردست تجربہ قرار دیا،


لاہور قلندرز کے جارحانہ بیٹسمین بین ڈنک نے عمدہ ایونٹ میں شرکت کیلئے لاہور قلندرز کا شکریہ ادا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ایک بار پھر ملاقات ہوگی


جنوبی افریقی کمنٹیٹر کاس نائیڈو نے کہا کہ پاکستانیوں نے جس طرح انہیں خوش آمدید کہا اس کو سراہنے کیلئے ان کے پاس الفاظ نہیں ہیں۔

ملتان سلطانز کے انگلش آل راؤنڈر روی بوپارا نے پاکستان میں ایک بار پھر کرکٹ کھیلنے کو زبردست تجربہ قرار دیتے ہوئے ایونٹ کی فاتح ٹیم کیلئے ایک انوکھی تجویز بھی پیش کرڈالی۔ان کا کہنا تھا کہ زائد العمر افراد کے کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کے زیادہ امکانات ہیں لہٰذا بہتر یہی ہوتا کہ اوسط کے لحاظ سے زائد العمر ٹیم کو پی ایس ایل فائیو کی ٹرافی دے دی جاتی۔

واضح رہے کہ پشاور زلمی کے تمام ملکی اور غیر ملکی کھلاڑی اپنے گھروں کو روانہ ہو گئے جن میں ہاشم آملہ،سکندر رضا اور ڈیرن سیمی بھی شامل ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں